فيس بک – نیا اپڈیٹ فیچر

جاويداختر

لیجئے آگیا فیس بک کا نیا اور بہت ہی خاص فيچر اپ ڈیٹ

قارئین آپ کو تو پتہ ہی ہو گا کہ فیس بک کیلیفورنیا میں واقع ایک ایسی کمپنی ہے جو آن لائن ذرائع و ابلاغ، پیغام رسانی اور سماجی رابطہ کے لئے اپنے صارفین کو ایک پلیٹ فارم مہیا کراتی ہے، اس کی ویب سائٹ بنام فیس بک 4 فروری 2004ء کو مارک زیرک نامی  ایک انجینئر کے ہاتھوں وجود میں آئی۔ مارک زیرک کے ساتھ ہارورڈ یونیورسٹی کے ان کے کئی ساتھی  اور ہم نشین جن میں دوسٹن ماسکوفت اور ،کرو ہیوزس ، ایڈواڈو سورین انڈریو میکولم  شامل تھے ان کے ساتھ کام کیاتھا۔  آج یہ ویب سائٹ سماجی رابطے کی ایک بہت وسیع پلیٹ فارم میں تبدیل ہو چکی ہے جس میں روزانہ کم و بیش لاکھوں افراد شامل ہو رہے ہیں اور اس کی مختلف سروسز کا لطف اٹھا رہے ہیں،

فیس بک نے حال ہی میں اطلاعات و  اشتراکات کی جانچ پڑتال کی غرض سے اپنے فیس بک پلیٹ فارم کے لئے  ایک نئے اسکرین فیچر کے شروعات کا اعلان کیا ہے

کیا ہے اس نئے اپڈیٹ میں

اس نئے اپڈیٹ میں خاص بات یہ ہے کہ اگر فیس بک یوزر 90 سے زائد دنوں کی خبروں کو شیئر کرنے کی کوشش کریں گے تو فیس بک سرور صارف کی اسکرین پر کچھ اس طرح کی وارننگ بھیجے گا.

فيس بک - نیا  اپڈیٹ فیچرThis article is over 3 month old
اس وارننگ کے نیچے دو آپشن ہوں گے
Continue               Go Back
یوزر کو دونوں میں سے ایک اختیار کرنا ہوگا۔

فیس بک نے تسلیم کیا کہ پرانی خبروں کے نئے پس منظر میں پوسٹ ہونے کے سبب بہت ساری غلط فہمیاں پیدا ہوتی ہیں اور جو لوگ بھی  ایسا کرتے ہیں وہ غلط معلومات کو پھیلانے میں اپنا رول نبھاتے ہیں ، اپنا اور دوسروں کا وقت ضائع کرتے ہیں کیونکہ پرانی خبروں کے نشر و اشاعت سے محض وقت کا ضیاع ہاتھ لگتا ہے اور ساتھ ہی بہت ساری غلط فہمیاں اور کنفیوزن بھی ۔

سماجی نیٹ ورکنگ کمپنی

Social Media Company

خاص طور پر نیوز پبلیشرز نے پرانی کی خبروں اور واقعات کو کرنٹ مواقع پر استعمال کے تعلق سے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اپنے بلاگ کی اشاعت میں کہا کہ  ہم نے فیس بک کی خبروں کے بارے میں جب لوگوں کی رائے جاننے کی کوشش کی تو ان کا کہنا تھا کہ ہم کرنٹ اور قابل اعتماد معلومات چاہتے ہیں، اسی وجہ سے ہم نے 2018 کے وسط  سے ہی ایک ایسے بٹن کو شامل کر دیا ہے جس سے مضامین کے ذرائع کی معلومات فراہم ہو جایا کرتی ہے

کمپنی نے مزید کہا کہ آج ہم نے فیس بک کی دنیا میں ایک نئے اسکرین فیچر کی شروعات کر دی ہے۔ جب بھی لوگ ایسے خبروں کے مضامین کو شائع و شیئر کرنے کی کوشش کریں گے جو 90  دنوں سے زائد عرصے کی ہو گی تو ان کے سامنے ایک وارننگ پیج کھل جائے گا جسے دیکھ کر لوگ اس نوعیت کی خبروں کے اشتراک کرنے سے باز رہ سکیں گے۔

فیس بک کے نائب صدر نے کمپنی کے بلاگ پر اپنی تحریر میں کہا ہے کہ گذشتہ چند مہینوں کی تحقیق سے ہم اس نتیجہ پر پہنچے ہیں کہ مضمون یا خبر کے لکھے جانے کا اصل وقت اس مضمون یا خبر کا ایک اہم حصہ ہوا کرتا ہے جو اصل معاملے کے افہام و تفہیم میں قارئین کی مدد کرتا ہے

ماضی میں اس نوٹیفکیشن اسکرین کے مزید استعمالات کے سلسلے میں فیس بک نے کہا کہ اگلے چند مہینوں میں ہم اس کا تجربہ  دیگر استعمالات کے لئے بھی کریں گے ۔ ان میں ایک اور سب سے اہم ہے کورونا وائرس پر مشتمل خبروں اور مضامیں کی اشاعتوں کی تصدیق  کے لئے۔ اس سلسلے میں ہم اس نوٹیفکیشن اسکرین کا استعمال اس طرح کریں گے کہ جو بھی معلومات ہمیں فراہم ہوگی اس کے لنکس کو ہم کرونا وائرس سنیٹر سے تصدیق کرائیں گے تاکہ صارفین کو قابل اعتماد صحت کی معلومات فراہم ہو سکے

الجزيره

2 thoughts on “فيس بک – نیا اپڈیٹ فیچر”

  1. ،السلام علیکم الحمدللہ اچھا ہے، اللہ تعالی سے دعا ہے صحت و عافیت عطا فرمائے امین

    جواب دیں

Leave a Comment